اطالوی میئر نے دھمکی دی ہے کہ کارونیوائرس سے لڑنے کے لئے شعلہ بردار بھیجیں گے

میں دائر خبریں تجزیہ جات by 26 مارچ 2020 پر ۰ تبصرے

حکومت کا اصل چہرہ کیا ہے جو سیاست اور میڈیا کے ذریعہ خدا کے ساتھ مل کر پھیل رہا ہے کنٹرول مخالف؟ اندردخش کی علامت کو دیکھیں۔ کیا اندردخش خفیہ طور پر نئے عالمی نظم کی علامت ہے؟ کیا دنیا نوح کے زمانے کی طرح کورونا سمندری لہر کی لپیٹ میں ہے؟ سیلاب کے بعد کیا ہوا؟ اندردخش۔

اس اطالوی میئر کا انتخاب کرتے ہوئے "ہم آگ بھڑکانے والے بھیجتے ہیں!"

اب ہم سوچتے ہیں کہ ہمیں اس کو لفظی طور پر نہیں لینا چاہئے ، لیکن اگر یہ لفظی طور پر ہونے جا رہا ہے تو کیا ہوگا؟ اس میئر کے منہ سے آنے والی دھمکی آمیز زبان پر ایک نظر ڈالیں۔ کیا وزیر گریپھائوس بھی کورونا وائرس سے 'بے قابو' ہونے کی حیثیت سے معاملہ کرنا شروع کردیں گے اور میڈیا کے توسط سے 'یہ ہاتھ سے نکل رہا ہے'؟ "کیونکہ آپ نہیں سنتے اور اندر نہیں رہتے!"

کیا تمہیں یاد ہے یہ انتباہ نومبر 2019 سے؟

یہاں پر میری کتاب اور بہت سے مضامین (مفت میں پڑھنے کے قابل) میں ، میں نے وضاحت کی کہ اندردخش نئے عالمی نظم کے خدا کی علامت ہے۔ لوسیفر. نیا ورلڈ آرڈر لوسیفر کی طرح ایک دنیا کے لئے کوشش کر رہا ہے۔ لوسیفر کے لئے علامت بپھومیٹ ہے: ہیرمفروڈائٹ (androgynous یا 'صنفی غیر جانبدار') چمرا بک (پڑھیں یہاں کچھ chimerism ہے).

اطالوی شہر کیمپینیا کے میئر ونسنزو ڈی لوکا

ٹیگز: , , , , , , , , , , , ,

مصنف کے بارے میں ()

تبصرے (14)

ٹریک بیک URL | تبصرہ فیڈ آر ایس ایس

  1. مارٹن ویر لینڈ نے لکھا:

    اب ہم جس وقت میں ہیں ویڈیو میں منٹ 3:17

  2. ہیری منجمد نے لکھا:

    قانون نافذ کرنے والے افسروں میں سے ایک کا کہنا ہے کہ کچھ ویڈیو گیمز کھیلیں۔

    ڈبلیو ایچ او سمیت کچھ اسکالر اب یہ کہہ رہے ہیں کہ ایک بہت بڑا “مجازی حقیقت میں عروج” ابھر رہا ہے جہاں تمام "کھیل" تیار اور بہتری پائی جاتی ہیں ، ان کے رہائشی کمرے میں رہنے والے افراد جو مجبوری یا نام نہاد "رضاکارانہ" تنہائی کو ورچوئل سے تعبیر کرتے ہیں۔ دنیایں حرکت کر سکتی ہیں جو اصل چیز سے الگ نہیں ہیں۔ یہاں تک کہ درس و تدریس کے پروگرام بھی بچوں کو ورچوئل دنیاؤں کے ذریعہ پیش کیے جاسکتے ہیں تاکہ مستقبل میں انہیں واقعی اسکول نہیں جانا پڑے گا بلکہ ایک "ورچوئل کلاس روم" میں جانا پڑے گا جہاں وہ دوسرے بچوں کے ساتھ ورچوئل ٹیچر سے درس حاصل کرسکتے ہیں جو اصل میں پڑھاتا ہے ، اور کیا حقیقت نہیں ہے تمیز ہے۔

    کہا جاتا ہے کہ یہ توقع کی جاتی ہے کہ مستقبل قریب میں لوگوں کو مستقل طور پر تنہائی میں پڑنا پڑے گا کیونکہ وائرس بڑھتے رہتے ہیں ، لیکن حقیقت پسندی کے ساتھ یہ بالکل بھی مسئلہ نہیں ہے اور لوگ باہر جانا بھی نہیں چاہتے ہیں کیونکہ مجازی دنیا جہاں ہے وہ اصل چیز سے بالکل بھی الگ نہیں ہو سکتے ہیں۔

    لہذا ٹرانس ہیومنیزم کو ان نام نہاد لاک ڈاؤن اور خود کو الگ تھلگ کرنے کے ذریعے بھی بہت زیادہ فروغ دیا گیا ہے اور جلد ہی یہ بہت زیادہ نارمل اور بہت زیادہ ترقی یافتہ ہوجائے گی۔

  3. ولیم ایس نے لکھا:

    نرسنگ عملہ اور اہم ملازمت والے افراد جن کو سخت سردی ہے وہ کام کرسکتے ہیں۔

  4. مارٹن ویر لینڈ نے لکھا:

    نیدرلینڈ میں زیادہ تر ریٹائرمنٹ گھروں میں کچھ دروازوں کے باہر پن کوڈ لاک ہوتا ہے۔ اس صورت میں ، بوڑھا شخص اندر سے دروازہ نہیں کھول سکتا۔ وہ جدید ٹکنالوجی ہے۔ اگر کورونا وائرس پر شبہ ہے تو ، دروازہ لاک کیا جاسکتا ہے۔ عام طور پر اس طرح کے نرسنگ ہوم کے قریب ایک شمشان خانہ ہوتا ہے۔ بہر حال ، یہ عام طور پر آخری اسٹیشن ہوتا ہے۔ بچے مزید نہیں مل سکتے ہیں۔ لاک ڈاؤن۔ خوش قسمتی سے ، وہ اچھی دیکھ بھال پر بھروسہ کرسکتے ہیں۔ نرسنگ عملہ پروٹوکول کی پوری سختی سے پابندی کرتا ہے اور ممکنہ طور پر متاثرہ عمر رسیدہ افراد کو اپنے کمرے میں رکھتا ہے .. بصورت دیگر آپ انفیکشن کا خطرہ چلاتے ہیں (اور آپ کو الگ الگ ہونا ضروری ہے) یا دوسرے بزرگ افراد انفکشن ہوجاتے ہیں ... آپ یہ نہیں چاہتے ہیں۔ وہ فارم جو لیب سے واپس آتا ہے بعض اوقات "کورونا وائرس مثبت" کہتا ہے۔ یہ بات پریشان کن ہے کہ اتنے بڑے شخص کو لاک لگا دینا ، لیکن ہاں .. ”یہ ضرور ہوگا ، یہ کوئی تفریح ​​نہیں ہے ، لیکن لیب کے نتائج سے کون مخالفت کرسکتا ہے؟ آپ پروٹوکول پر قائم رہیں… ”

    https://www.telegraaf.nl/nieuws/1934188160/bewoners-verpleeghuizen-gescheiden-van-familie-voelt-als-stilte-voor-de-storm

  5. سنشین نے لکھا:

    Tja, Vincenzo de Luca. Is er ook zo een. Ook in Italie zitten Zij op de sleutelposities. Alles wordt internationaal gecoordineerd en geregisseerd door Hen. Zij zien alles, Zij bepalen alles, Zij zijn de norm, Zij zijn de deskundigen, Zij zijn de pers, Zij zijn de sterke arm enz. Wij zitten gewoon in een dictatuur bestuurd door Hen. Hoe komen Wij, de gewone bevolking, van Ze af?

  6. انسان ہونا نے لکھا:

    ہیلو مارٹن،

    Allereerst wil ik je bedanken voor de vele inzichtelijke artikelen door de jaren heen. Als steun voor je werk maar ook zeker voor de inhoud van het boek, heb ik het besteld. Ik hoop dat iedere mens op de aarde eens in de spiegel kan kijken waar die mee bezig is en zich diep gaat afvragen wat de essentie van het leven is.

    Ik wens iedereen heel veel sterkte, wijsheid en alle gezondheid toe in deze hectische tijd.

    • سنشین نے لکھا:

      Even een belangrijk stukje via de link via jhonny bijgevoegd.

      انٹرویو استعمال
      The CDC 2019-Novel Coronavirus (2019-nCoV) Real-Time RT-PCR Diagnostic Panel is a real-time RT-PCR test intended for the qualitative detection of nucleic acid from the 2019-nCoV in upper and lower respiratory specimens (such as nasopharyngeal or oropharyngeal swabs, sputum, lower respiratory tract aspirates, bronchoalveolar lavage, and nasopharyngeal wash/aspirate or nasal aspirate) collected from individuals who meet 2019-nCoV clinical and/or epidemiological criteria (for example, clinical signs and symptoms associated with 2019-nCoV infection, contact with a probable or confirmed 2019-nCoV case, history of travel to geographic locations where 2019-nCoV cases were detected, or other epidemiologic links for which 2019-nCoV testing may be indicated as part of a public health investigation). Testing in the United States is limited to laboratories certified under the Clinical Laboratory Improvement Amendments of 1988 (CLIA), 42 U.S.C. § 263a, to perform high complexity tests.
      Results are for the identification of 2019-nCoV RNA. The 2019-nCoV RNA is generally detectable in upper and lower respiratory specimens during infection. Positive results are indicative of active infection with 2019-nCoV but do not rule out bacterial infection or co-infection with other viruses. The agent detected may not be the definite cause of disease. Laboratories within the United States and its territories are required to report all positive results to the appropriate public health authorities.
      Negative results do not preclude 2019-nCoV infection and should not be used as the sole basis for treatment or other patient management decisions. Negative results must be combined with clinical observations, patient history, and epidemiological information.

      Aan de virustest hebben wij dus niet veel. Hoe wordt het behandelplan bepaald en welke medicijnen worden gebruikt? Protocol? Het lijkt op experimenteren met patienten door artsen en maar zien of een behandeling de juiste is. De vraag is worden patienten hierdoor juist niet zieker. Begreep dat artsen en verpleegkundigen niet altijd een mondkapje dragen en dus zelfs de ziekte/ziekte kunnen overdragen aan potentiele corona patienten. En soms doorwerken terwijl zij zelf potentieel corona hebben. Overlijden de patienten wel aan corona uiteindelijk of aan iets anders? Cui bono? Precies, de wereld verbeterende social engineers.

  7. ایلیسا نے لکھا:

    @ martin Let behalve op (het framework van) de symboliek in de boodschap ook op de lichaamstaal/gezichtsuitdrukking van deze leiders of lijders
    Bij een afwezigheid van gevoel en geweten, drukt zich de ware intentie uit op het gezicht
    Ook wel in de volksmond waar het hart van vol is…
    Een luciferiaans hart toont zich in ogen/gezichtuitdrukking en lichaamstaal.
    Door het bestaan van de “blinde vlek” in onze mindset nemen we aan dat (vallen we voor de suggesties) dat een vriendelijke autoriteit een vriendelijk mens/hart is. De ware betekenis van face value.
    We zijn aanbeland in een tijd dat persoonlijkheden (persona=masker) hun ware gezicht laten zien.
    Deze link biedt diepere aanknopingspunten en voorbeelden. Gezichtsherkenning vanuit bewustzijn.

    http://www.stuartwilde.com/2013/01/understanding-global-demonic-possession-through-face-recognition/
    On a sidenote: AI is een uitermate rudimentair bedenksel of liever kopie van menselijke vermogens. Een computer is niet nodig om het ware te (h)erkennen. Maar zolang ieder individueel mens zijn ware identiteit (mindset) nog niet teruggevorderd heeft, zal hij blijven bedelen om een externe autoriteit.

جواب دیجئے

بند کریں
بند کریں

سائٹ استعمال کرنے کے لۓ آپ کو کوکیز کے استعمال سے اتفاق ہے. مزید معلومات

اس ویب سائٹ پر کوکی کی ترتیبات کو 'کوکیز کی اجازت دینے کیلئے' مقرر کیا جاسکتا ہے تاکہ آپ کو بہترین برائوزنگ تجربہ ممکن ہو. اگر آپ اپنی کوکی ترتیبات کو تبدیل کرنے کے بغیر اس ویب سائٹ کو استعمال کرتے رہیں گے یا ذیل میں "قبول کریں" پر کلک کریں تو آپ اتفاق کرتے ہیں ان کی ترتیبات

بند کریں